تازہ ترین
  • بریکنگ :- وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکی مریم اورنگزیب کےبیان کی مذمت
  • بریکنگ :- بدتہذیبی اوربدتمیزی مسلم لیگ ن کاوتیرہ ہے،وزیراعلیٰ پنجاب
  • بریکنگ :- لیگی رہنمابی بی شہیدکیخلاف بھی غیرشائستہ الفاظ استعمال کرتےرہے،عثمان بزدار
  • بریکنگ :- مریم اورنگزیب نےاخلاقی پستی کامظاہرہ کیا،وزیراعلیٰ پنجاب
  • بریکنگ :- مریم اورنگزیب نےہرپاکستانی کی دل آزاری کی،وزیراعلیٰ پنجاب
  • بریکنگ :- مریم اورنگزیب نےثابت کیان لیگ میں اخلاقی اقدارکاوجودنہیں،عثمان بزدار
  • بریکنگ :- نازیباالفاظ پرانہیں قوم سےمعافی مانگنی چاہیے،وزیراعلیٰ پنجاب

یورو 5 درآمد کرنے پر آئل کمپنیوں کی ایک اورحکومتی فیصلے کی مخالفت

Last Updated On 08 July,2020 07:14 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) آئل کمپنیوں نے ایک اورحکومتی فیصلے کی مخالفت کردی، یورو 5 لانے سےپٹرولیم مصنوعات کی قیتموں میں 7 روپے لٹر تک اضافہ ہوجائے گا۔ آئل کمپنیز نے حکومت کو خط لکھ دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آئل کمپنیز ایڈوائزری کونسل کی جانب سے پٹرولیم ڈویژن کو لکھے گئے خط میں کہاگیاہے کہ عرب ممالک یورو 5 کوالٹی کی مصنوعات کی ہماری ضروریات پوری نہیں کرسکتے۔

خط میں مزید کہا گیا ہے کہ ہمیں اپنی ضروریات پوری کرنے کے لیے پٹرولیم مصنوعات یورپ دے، درآمد کرنا ہوں گی یورپ سے درآمد کرنے کی صورت میں ٹرانسپورٹیشن کاسٹ بڑھ جائے گی اوریورپ سے یورو5 درآمد کرنے سے قیمت میں 5 سے 7 روپے فی لٹر اضافہ ہوجائے گا۔

آئل کمپنیز نے کہاہے کہ یورپ سےتیل درآمد سے قومی خزانے پر سالانہ 25 سے 33 ارب روپے کا بوجھ پڑے گا اوسی اے سی نے اپنے خط میں کہاہے کہ ہماری آئل ریفائنریاں یورو5 کے لیے مطلوبہ ضروریات پوری نہیں کرسکتیں یورو5 کی دستیابی کو یقینی بنانےمیں تین سے چھ ماہ کا عرصہ درکارہوگا۔

اپنے خط میں آئل کمپنیز نے بندرگاہوں پریورو5 کے لیے ٹیسٹنگ باڈیز کی استعدادکار بہتر کرنے کی سفارش کی کمپنیوں نے سفارش کی ہے کہ یورو5 متعارف کروانے سے قبل حکومت تمام شراکت دارون سے تفصیلی مذاکرات کرے