تازہ ترین
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کورونامریضوں کی تعداد 12 لاکھ 21 ہزار 261 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک میں کوروناکےایکٹوکیسزکی تعداد 64 ہزار 564 ہے،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 24 گھنٹے کےدوران کوروناسےمزید 63 اموات
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کوروناسےجاں بحق افرادکی تعداد 27 ہزار 135 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےکےدوران 57 ہزار 77 کوروناٹیسٹ کیےگئے،این سی اوسی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کورونا کے مزید 2512 کیس رپورٹ،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 4.4 فیصدرہی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکے 3 ہزار 610 مریض صحت یاب،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےصحت یاب افرادکی مجموعی تعداد 11 لاکھ 29 ہزار 562 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں ایک کروڑ 87 لاکھ 97 ہزار 433 کوروناٹیسٹ کیےجاچکے
  • بریکنگ :- کوروناسےمتاثر 5117 مریضوں کی حالت تشویشناک،این سی اوسی
  • بریکنگ :- پنجاب 4 لاکھ 20 ہزار 615 ،سندھ میں 4 لاکھ 49 ہزار 349 کیسز،این سی اوسی
  • بریکنگ :- خیبرپختونخواایک لاکھ 70 ہزار 738،بلوچستان میں 32 ہزار 722 کیس رپورٹ
  • بریکنگ :- اسلام آباد ایک لاکھ 3 ہزار 923 ،گلگت بلتستان میں 10 ہزار 232 کیسز
  • بریکنگ :- آزادکشمیرمیں کورونامریضوں کی تعداد 33 ہزار 682 ہوگئی،این سی اوسی

فیصل آباد: گندم کوٹہ بحال نہ ہونے پر آٹا چکی مالکان کا دھرنا دینے کا اعلان

Published On 09 September,2020 08:30 am

فیصل آباد: (دنیا نیوز) فیصل آباد میں محکمہ خوراک کی جانب سے آٹا چکیوں کا بند کیا گیا گندم کوٹہ تاحال بحال نہ کیا گیا جس پر آٹا چکی مالکان نے احتجاج کرتے ہوئے محکمہ خوراک آفس کے باہر دھرنا دینے کا اعلان کردیا۔

محکمہ خوراک کی جانب سے بند کیا گیا آٹا چکی مالکان کا گندم کا سرکاری کوٹہ ایک ماہ گزرنے کے بعد بھی بحال نہ کیا گیا۔ آٹا چکی مالکان 1475روپے فی من کے حساب سے ملنے والی سرکاری گندم بند ہونے سے اوپن مارکیٹوں سے 2300 روپے فی من گندم خریدنے پر مجبور ہیں جس پر آٹا چکی اونرز ایسوسی ایشن نے محکمہ خوراک کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے دھرنا دینے کا اعلان کر دیا۔

گندم کی قیمتوں میں اضافے سے دیسی آٹے کی قیمت بھی 85 روپے فی کلوگرام تک جا پہنچی ہے۔ معاملے پر ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولر علی عمران کہتے ہیں کہ چکی مالکان کے گندم کوٹہ پالیسی میں ترامیم کی جا رہی ہیں، جلد انہیں گندم کی فراہمی بھی شروع کر دی جائے گی۔

شہری کہتے ہیں کہ گندم اور آٹے کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کو کنٹرول کرنے کیلئے مستقل اقدامات اٹھائے جائیں تا کہ شہری سستے آٹے کی سہولت سے مستفید ہوسکیں۔