تازہ ترین
  • بریکنگ :- اب ن لیگ کےمعافی مانگنےکاوقت ہواچاہتاہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- ن لیگ 4 ماہ سےکہہ رہی ہےکہ ان کی ڈیل ہوگئی،شہبازگل
  • بریکنگ :- یہ سب کوخودٹیلیفون کرکےبتاتےہیں کہ بات بن گئی ہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- اپوزیشن کی کاوشیں اپنےہی دام میں صیادآگیاکےمصداق ہیں،شہبازگل
  • بریکنگ :- ہمارےانکشاف سےان کی چیخ وپکارشروع ہوگئی،شہبازگل
  • بریکنگ :- پہلی ڈیل شریف فیملی نےضیاالحق،دوسری جونیجوکیساتھ کی،شہبازگل
  • بریکنگ :- نوازشریف نےپرویز مشرف کےساتھ بھی ڈیل کی،شہبازگل
  • بریکنگ :- ن لیگ نےڈیل کرکےپارٹی کی سینئرقیادت کی پیٹھ میں چھراگھونپا،شہبازگل
  • بریکنگ :- ڈیل کےبعدساری شریف فیملی منظرعام سےغائب ہوگئی،شہبازگل
  • بریکنگ :- پہلےڈیل سےانکارکرتےرہےپھرکہا 10 کےبجائے 5 سال کی ڈیل ہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- مقصودچپڑاسی شریف فیملی کا 9 ہزارروپےپرملازم ہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- مقصودچپڑاسی کےاکاؤنٹ میں 3700 کروڑکس نےڈالے؟ شہبازگل
  • بریکنگ :- تمام ملازمین کےاکاؤنٹس میں کل 16 ارب روپےآئے،شہبازگل
  • بریکنگ :- اسلام آباد:شریفوں کوبتاناچاہیےکہ ڈیل کس سےہوئی،شہبازگل
  • بریکنگ :- شریفوں کی ڈاکٹرائن اقتدارمیں آنا،مال بنانا،ڈیل کرنااوربھاگ جاناہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- شریف فیملی پہلےگالیاں دیتی ہےپھرپاؤں پڑجاتی ہے،شہبازگل
  • بریکنگ :- شریف فیملی کو 16 ارب روپےکاجواب دیناپڑےگا،شہبازگل
  • بریکنگ :- چاروں شریف ڈیل اورڈھیل دینےکےباوجودنہیں بچ سکتے،شہبازگل

کوئٹہ کی جوائنٹ روڈ پر 15 سال سے قائم سبزی منڈی ہٹانے کے معاملے پر دکاندار پریشان

Published On 14 October,2021 09:20 am

کوئٹہ: (دنیا نیوز) کوئٹہ کی جوائنٹ روڈ پر 15 سال سے قائم سبزی منڈی کو ہٹایا جا رہا ہے جس سے دکاندار اور عوام پریشان ہیں۔ دکاندار کہتے ہیں کہ نہ ہی متبادل جگہ فراہم کی جا رہی ہے اور نہ ہی مارکیٹ ختم کرنے کے لیے وقت دیا جا رہا ہے۔

کوئٹہ کے علاقے جوائنٹ روڈ پر ریلوے فٹبال گراؤنڈ سے متصل سڑک کنارے یہ سبزی اور فروٹ مارکیٹ گزشتہ کئی سالوں سے قائم ہے لیکن اب ریلوے انتظامیہ کی جانب سے اس مارکیٹ کو ہٹانے کے احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں۔

گذشتہ 15 سالوں سے قائم اس مارکیٹ میں سو سے زائد فروٹ اور سبزیوں کی ریڑھیاں اور دکانیں موجود ہیں جن کا باقاعدہ کرایہ بھی ادا کیا جارہا ہے۔
شہر کے وسطی علاقے میں موجود ہونے کی وجہ سے یہ مارکیٹ جوائنٹ روڈ کے علاوہ قریبی علاقوں کے شہریوں کی پہنچ میں تھی جس کے ختم ہونے سے انھیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔

دکانداروں اور شہریوں کا مطالبہ ہے کہ فوری طور پر اس مارکیٹ کو ختم کرنے کی بجائے انہیں اس مقام سے قریب ہی کسی جگہ منتقل کر دیا جائے تو زیادہ بہتر ہو گا۔