تازہ ترین
  • بریکنگ :- برآمدات 27.8 فیصداضافےسے 26.9 ارب ڈالرکی سطح تک پہنچ گئیں
  • بریکنگ :- درآمدات 39 فیصداضافےسے 59.8 ارب ڈالرکی سطح تک پہنچ گئیں
  • بریکنگ :- کرنٹ اکاؤنٹ خسارےمیں 13.8 ارب ڈالرکااضافہ ریکارڈ
  • بریکنگ :- براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری 1.6 فیصدکمی سے 1.45 ارب ڈالررہی
  • بریکنگ :- زرمبادلہ ذخائرمئی کےتیسرےہفتے تک 16.108 ارب ڈالررہے،رپورٹ
  • بریکنگ :- اسٹیٹ بینک 10 ارب 2 کروڑڈالر،کمرشل بینکوں کےذخائر 6.08 ارب ڈالررہے،رپورٹ
  • بریکنگ :- ڈالرکی شرح تبادلہ 201.92 روپےفی ڈالرکی سطح پرپہنچ گئی،رپورٹ
  • بریکنگ :- 9ماہ میں ٹیکس ریونیو 28.5 فیصداضافےسے 4855 ارب روپےرہا،رپورٹ
  • بریکنگ :- جولائی تامارچ نان ٹیکس آمدنی 15.7 فیصدکمی سے 983 ارب رہی،وزارت خزانہ
  • بریکنگ :- جولائی تااپریل پی ایس ڈی پی کی مدمیں 603 ارب روپےمنظورکیےگئے
  • بریکنگ :- جولائی تامارچ مالیاتی خسارہ بڑھ کر 2566 ارب کی سطح تک پہنچ گیا، رپورٹ
  • بریکنگ :- اپریل میں مہنگائی کی شرح 13.4 فیصدریکارڈ ،رپورٹ
  • بریکنگ :- پہلے 10 ماہ میں مہنگائی کی شرح 11 فیصدریکارڈکی گئی،رپورٹ
  • بریکنگ :- وزارت خزانہ کی ملکی معیشت پرماہانہ آؤٹ لک رپورٹ جاری
  • بریکنگ :- پہلے 10 ماہ ترسیلات زر 7.6 فیصداضافےسے 26.1 ارب ڈالرریکارڈ

لازوال دوستی کسی بھی صورتحال سے متاثر نہیں ہوگی:پاکستان اور چین کا عزم

Last Updated On 08 September,2019 10:49 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) چینی وزیر خارجہ وانگ ژی کے دورہ پاکستان پر جاری مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ پاک چین دوستی علاقائی امن واستحکام کے لیے انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔ دونوں ممالک نے ہر ممکن تعاون کو بڑھانے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔

مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان اور چین نے ہر عالمی اور علاقائی فورم پر تعاون کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ لازوال دوستی کسی بھی صورتحال سے متاثر نہیں ہوگی۔ دونون ملکوں نے کشمیر کا مسئلہ سلامتی کونسل کی قرارداوں کے مطابق حل کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

وزیر خارجہ وانگ ژی کے دورہ پاکستان کے اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ چین پاکستان کی علاقائی سالمیت، خود مختاری اور قومی وقار کی حمایت کے لیے پرعزم ہے۔ سی پیک منصوبوں کی بروقت تکمیل سے سماجی اقتصادی ترقی اور روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔

چین کے وزیر خارجہ نے صدر، وزیراعظم، آرمی چیف اور وزیر خارجہ سے ملاقاتیں کیں۔ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ دونوں ممالک نے تمام عالمی فورمز پر تعاون اور حمایت جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔

چین کا کہنا ہے کہ مسئلہ کشمیر کو سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق پرامن طریقہ سے حل ہونا چاہیے۔ چین ہر اس یکطرفہ کارروائی کی مخالفت کرے گا جس سے صورتحال مزید پیچیدہ ہو۔

دونوں ممالک نےافغانستان میں تعاون کو فروغ دینے اور امن مصالحتی عمل کی حمایت کے عزم کا بھی اعادہ کیا اور کہا کہ تمام فریقین افغانستان میں امن اور استحکام کے لیے مستقبل کے قابل قبول سیاسی ڈھانچے پر بات کریں۔