تازہ ترین
  • بریکنگ :- ضلعی انتظامیہ کےساتھ طبی سہولتوں کی فراہمی کیلئےسرگرم ہیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- کورکمانڈربہاولپورنےکیمپوں میں دی گئی سہولتوں کاجائزہ لیا،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- کورکمانڈرنےہدایت کی کہ زیادہ ترمریضوں کوطبی سہولتیں دی جائیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- پاک آرمی کی چولستان کےدورافتادہ علاقوں میں مفت طبی سہولتیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- منصوبےکوعملی جامہ پہنانے کیلئے پاک آرمی کی خصوصی ٹیمیں تشکیل،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- 2021 میں چنن پیر،کھتری بنگلہ،دین گڑھ میں میڈیکل اورآئی کیمپ کاانعقادکیاگیا
  • بریکنگ :- چاہ ناگراں،چاہ ملکانہ میں میڈیکل اورآئی کیمپ کا انعقادکیاجاچکاہے،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- کالاپہاڑ،احمدپورایسٹ، منچن آباد اور چشتیاں میں فری میڈیکل اورآئی کیمپ کا انعقادکیاگیا
  • بریکنگ :- 12 ہزارافراد کوفری طبی سہولیات مہیا کی جا چکی ہیں،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- تحصیل اسپتال فورٹ عباس میں فری میڈیکل کیمپ 12سے 17 اکتوبرتک جاری ہے
  • بریکنگ :- 15 اکتوبر 2021کوکورکمانڈر بہاولپورنےآئی کیمپ کا دورہ کیا،آئی ایس پی آر

’اسلام کے رہنما اصولوں پر عمل پیرا ہوکر کرپشن سے نجات حاصل کر سکتے ہیں‘

Published On 24 May,2021 07:26 pm

اسلام آباد: (دنیا نیوز) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اسلام کے رہنما اصولوں پر عمل پیرا ہو کر ہی انصاف کا نظام رائج ہو سکتا ہے اور ہم کرپشن سے نجات حاصل کر سکتے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان سے اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئر مین ڈاکٹر قبلہ ایاز اور کونسل ممبران کی ملاقات ہوئی۔ اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئر مین اور ممبران نے تحفظ ناموس رسالت ﷺ پر وزیر اعظم کو خراج تحسین پیش کیا۔

کونسل نے اسلاموفوبیا کے بارے بیانیئے پر بھی وزیراعظم کی تعریف کی ، کونسل نے کشمیر اور فلسطینیوں کے حقوق کا مقدمہ لڑنے پر وزیر اعظم کو بھر پور خراج تحسین پیش کیا۔

عمران خان نے کہا ہے کہ کونسل کا کردار پاکستان کو ریاست مدینہ کے خطوط پر استوار کرنے میں اہمیت کا حامل ہے۔ ریاست مدینہ کے دو سنہرے اصول جن میں انصاف اورعوامی فلاح شامل ہیں، ہماری ترقی کا ضامن بن سکتے ہیں۔ مغرب نے انہی اصولوں کو اپنا کر ترقی کی۔ وہاں کوئی قانون سے بالاتر نہیں اور انصاف کا بول بالا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بد قسمتی سے پاکستان کو حقیقی اسلامی فلاحی ریاست بنانے کے بارے میں پہلے کسی لیڈر نے نہیں سوچا۔ میں نے سیاست صرف اسی لیے شروع کی کہ ریاست مدینہ کے اصولوں کو لاگو کر کے غریب کی خدمت کر سکوں۔ میں نے مغرب کو بہت قریب سے دیکھا ہے، اسی نتیجے پر پہنچا ہوں کہ اسلام کے رہنما اصولوں اور سنت نبوئ ﷺ پر عمل کرکے ہی پاکستان فلاحی اور ترقی یافتہ ملک بن سکتا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ مغربی اقدار ہم سے مختلف ہیں اور ہماری نوجوان نسل کو اس ضمن میں رہنمائی درکار ہے۔ اسلامی نظریاتی کونسل نوجوان نسل کی اصلاح میں مددگار ثابت ہو سکتی ہے۔ اسلام نے ہی کمزور طبقے کو طاقتور بنایا، خواتین کو حقوق مہیا کیے۔ اسلامی رہنما اصولوں پر عمل پیرا ہو کر ہی انصاف کا نظام رائج ہو سکتا ہے اور ہم کرپشن سے نجات حاصل کر سکتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ریاست مدینہ کے نظام تک کا سفر ایک جہد مسلسل ہے جس میں معاشرے کے تمام طبقات بشمول مذہبی رہنماؤں کا کردار اہم ہے۔