تازہ ترین
  • بریکنگ :- منشیات سےحاصل آمدن دہشتگردی کیلئےاستعمال ہوتی ہے،آرمی چیف
  • بریکنگ :- ضروری ہےمنشیات ڈیلروں کےساتھ سختی سےنمٹاجائے،آرمی چیف
  • بریکنگ :- آرمی چیف نےانسدادمنشیات کیلئےاےاین ایف کی کوششوں کوسراہا
  • بریکنگ :- ڈی جی اےاین ایف میجرجنرل محمدعارف ملک نےآرمی چیف کااستقبال کیا
  • بریکنگ :- آرمی چیف کااےاین ایف ہیڈکوارٹرزکادورہ،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- آرمی چیف کواےاین ایف کی کارکردگی پربریفنگ
  • بریکنگ :- آرمی چیف کواےاین ایف آپریشنل امورپربریفنگ،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- آرمی چیف سےاےاین ایف کےافسران اورعملےکی ملاقات
  • بریکنگ :- منشیات کےاسمگلرقومی سلامتی کےلیےخطرہ ہیں،آرمی چیف
  • بریکنگ :- منشیات کےاسمگلرانسانیت کےدشمن ہیں،آرمی چیف

لاہور: آلائشیں ٹھکانے لگانے کا سلسلہ جاری، 15ہزار سے زائد افسر و اہلکار مصروفِ عمل

Published On 22 July,2021 10:49 am

لاہور: (دنیا نیوز) ایل ڈبلیو ایم سی کی جانب سے لاہور میں آلائشیں ٹھکانے لگانے کا سلسلہ جاری ہے، 15 ہزار سے زائد افسر اور اہلکار فیلڈ میں موجود ہیں۔

عیدالاضحی پر ایل ڈبلیو ایم سی صفائی انتظامات یقینی بنانے کیلئے متحرک، آلائشیں اکٹھی کرنے کے لئے شہریوں میں 15 لاکھ بائیو ڈی گریڈ ایبل بیگز تقسیم کئے گئے۔ 290ماڈل کیمپس سے شہری نام درج کروا کر بیگ وصول کر رہے ہیں، 15ہزار سے زائد افسر اور اہلکار فیلڈ میں موجود ہیں۔

صفائی پلان کے تحت 330ایکسکیویٹرز، 266 ٹرالیاں، 185 لوڈرز اور 1022ڈمپرز ویسٹ اٹھانے میں مصروف ہیں۔ موجودہ مشینری کے ساتھ اضافی 3500پک اپس کی مدد سے آلائشیں ٹھکانے لگائی جا رہی ہیں۔ راوی ٹاؤن میں 359،شالیمار 377،واہگہ ٹاؤن 258،عزیزبھٹی ٹاؤن میں 289 پک اپس ویسٹ اٹھا رہی ہیں۔ داتاگنج بخش ٹاؤن میں 427، گلبرگ ٹاؤن 292، سمن آباد میں 309 پک اپس سڑکوں پر رواں دواں ہیں۔ علامہ اقبال ٹاؤن میں 505،نشتر ٹاؤن 454اور رنگ روڈ پر 34پک اپس ڈیوٹی دے رہی ہیں۔ گلی محلوں سے آلائشیں اٹھا کر 119کولیکشن پوائنٹس پر بھجوایا جا رہا ہے۔

ڈپٹی کمشنر لاہور مدثرریاض ملک کا کہنا ہے کہ صفائی انتظامات مکمل ہیں، شہری انتظامیہ کے ساتھ تعاون کریں۔ سی ای او ایل ڈبلیو ایم سی رافعہ حیدر نے شہریوں سےعملے کے ساتھ تعاون کرنے کی اپیل کی۔ کہتی ہیں آلائشیں بیگ میں ڈال کر دروازے کے باہر رکھیں۔

شہر میں تعفن اور بدبو کے خاتمے کے لئے چونے اور فنائل کا استعمال کیا جا رہا ہے جبکہ ایل ڈبلیو ایم سی پہلی بار بطور آپریشنل کمپنی فرائض سرانجام دے رہی ہے۔