تازہ ترین
  • بریکنگ :- کل مجھےبحرین جاناہے،بحرین ہمارااہم مسلم ملک ہے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- خاصی تعدادمیں پاکستانی بحرین میں موجودہیں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- بحرین کےوزیرخارجہ سےدوطرفہ تعلقات پربات ہوگی،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- سعودیہ سےدوطرفہ تعلقات کی بہتری کیلئےپیشرفت ہوئی،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاکستان کی کارکردگی کی آج دنیامعترف ہے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- سندھ کےعوام پیپلزپارٹی کی کارکردگی سےمایوس ہیں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- وزیراعظم نےکراچی کی بہتری کےلیےپیکج دیا،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- اندرون سندھ میں حالات تشویشناک ہیں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- پی ٹی آئی کی سندھ میں آمدسےکسی کوگھبراہٹ نہیں ہونی چاہیے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- سندھ کابہت بڑاطبقہ پیپلزپارٹی سےنجات چاہتاہے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- فیٹف کےحوالےسےپاکستان کی کارکردگی کی دنیامعترف ہے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاکستان نے27میں سے26نکات پرمکمل عملدرآمدکیا،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- کراچی:وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی کی میڈیاسےگفتگو
  • بریکنگ :- ہم افغانستان میں امن چاہتےہیں، وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- افغان اپنےملک میں امن چاہتےہیں، وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی

عید کے دوسرے روز بھی سنت ابراہیمی کی ادائیگی کا سلسلہ جاری

Published On 22 July,2021 09:44 am

اسلام آباد: (دنیا نیوز) عید قرباں کے دوسرے روز بھی فرزندان توحید سنت ابراہیمی پر عمل کرتے ہوئے جانوروں کو اللہ تعالی کی راہ میں قربان کرنے کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہیں۔

قرب الہی کے حصول کیلئے ملک بھر میں آج بھی ہزاروں جانوروں کو قربان کیا جا رہا ہے، جو لوگ گذشتہ روز قربانی نہیں کر پائے آج عید کے دوسرے دن مقدس فریضہ سر انجام دینے میں مصروف ہیں۔ قربانی کے ساتھ ساتھ چٹ پٹے پکوان تیار کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ غربا اور مسکینوں میں گوشت تقسیم کر کے مسلمان قربانی کی حقیقی روح کے مطابق عمل کر رہے ہیں۔

قربانی کیلئے شہری یا تو جانوروں کو پالتے ہیں یا پھر منڈی سے من پسند جانوروں کا انتخاب کرتے ہیں تاہم ان جانوروں کو جب اللہ کی راہ میں قربان کرنے کا وقت آتا ہے تو اصلی قصائی کا ملنا محال ہو جاتا ہے، ایسے میں دیہاڑی دار اناڑی قصائی بھی میدان میں آ جاتے ہیں، جو ایک طرف جانوروں کو ذبح کرنے کی اہلیت نہیں رکھتے تو دوسری طرف وہ اس مقدس مذہبی فریضے کی ادائیگی کے شرعی تقاضوں سے بھی لا علم ہوتے ہیں، اس صورتحال میں اناڑی قصائیوں کی وجہ سے قربانی کے جانوروں کو مختلف اذیتوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

کئی بار دیکھا گیا ہے کہ غلط تکنیک کے استعمال کی وجہ سے قربانی کے جانور بے قابو ہو جاتے ہیں جس کے بعد قصائیوں کی جانب سے جانوروں پر بہیمانہ تشدد کیا جاتا ہے، اس مار دھاڑ کے نتیجے میں قربانی کے جانوروں کو شدید ترین جسمانی اذیت کا سامنا کرنا پڑتا ہے، بعض بے رحم افراد تشدد سے قربانی کے جانوروں کی ہڈیاں تک توڑ دیتے ہیں، بسا اوقات اس سے بھی سنگین واقعات سامنے آتے ہیں۔