تازہ ترین
  • بریکنگ :- لاہورہائیکورٹ نےتحریری فیصلہ جاری کردیا
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب یکم جولائی شام 4 بجےاجلاس بلائیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- تمام ادارےعدالتی احکامات کی پاسداری کرائیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- وزیراعلیٰ کےانتخاب کاعمل مکمل کیےبغیراجلاس ملتوی نہیں ہوگا،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرآرٹیکل 130 کی شق 5 کےتحت اپنےفرائض سرانجام دیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب نومنتخب وزیراعلیٰ سےحلف لیں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- اجلاس میں دوبارہ گنتی ہوگی،لاہورہائیکورٹ کافیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرانتخابی عمل سےاگلےروز 11 بجےتک حلف لینےکےپابندہوں گے،فیصلہ
  • بریکنگ :- گورنرپنجاب الیکشن کنڈکٹ سےمتعلق اپنی رائےنہیں دیں گے،فیصلہ

'زبردست ٹیم کے نعرے لگانے والوں نےتسلیم کرلیا بغیرتیاری اقتدارمیں آئے'

Published On 23 December,2020 05:34 pm

مردان: (دنیا نیوز) مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز شریف نے کہا ہے کہ الیکشن سے پہلے زبردست ٹیم کے نعرے لگانے والے آج تسلیم کر رہے ہیں کہ وہ تیاری کے بغیر ہی اقتدار میں آئے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان بتائیں کہ انہیں شیروانی پہننے کی کیا جلدی تھی؟ نااہل حکمرانوں نے بائیس کروڑ عوام کی زندگیاں خطرے میں ڈال دیں، ان کا جانا ٹھہر چکا ہے۔

مریم نواز نے مردان میں پی ڈی ایم کی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اقتدار میں آنے سے قبل کہتے تھے میرے پاس 200 لوگوں کی زبردست ٹیم ہے لیکن ڈھائی سال بعد کہا گیا کہ مجھے گردشی قرضوں کا پتا نہیں تھا۔

انہوں نے وزیراعظم کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ کی 400 ارب روپے کی چینی ، آٹے پر 225 ارب روپے اور ایل این جی پر 122 ارب روپے کا ڈاکہ ڈالنے کی پوری تیاری تھی لیکن عوام کو ایک کروڑ نوکریاں دینے کی تیاری نہیں تھی۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کی اپنے دوستوں کو اعلیٰ عہدوں پر فائز کرنے کی پوری تیاری تھی لیکن صحت کی سہولتیں نہ دینے کی پوری تیاری تھی۔

مریم نواز نے کہا کہ بہنوئی کے پلاٹ پر قبضہ چھڑانے کیلئے پوری پولیس تبدیل کردی گئی۔ سیاسی مخالفین کی بہنوں اور بیٹیوں کو جیل میں ڈالا گیا۔ خارجہ پالیسی مستحکم کرنے کی کوئی تیاری نہیں تھی لیکن کشمیر بھارت کی جھولی میں پھینکنے کی پوری تیاری تھی۔

لیگی رہنما نے وزیراعظم عمران خان پر اپنے الفاظ کے نشتر چلاتے ہوئے کہا کہ آپ کو حکومت چلانا نہیں بلکہ صرف تابعداری کرنا آتی ہے۔ بندہ کرپٹ ہونے کے باوجود ایماندار ہے کیونکہ تابعدار ہے۔