تازہ ترین
  • بریکنگ :- بلاول بھٹوکی چینی ہم منصب وانگ ژی کیساتھ مشترکہ پریس کانفرنس
  • بریکنگ :- بطوروزیرخارجہ چین کےپہلےدورےپرانتہائی مسرت ہے،بلاول بھٹو
  • بریکنگ :- دوطرفہ تعلقات کی 71ویں سالگرہ کےموقع پردورہ انتہائی اہمیت کاحامل ہے،بلاول بھٹو
  • بریکنگ :- چین کی قیادت اورعوام کیلئےنیک خواہشات کاپیغام لایاہوں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاک چین دوستی نہ صرف علاقائی بلکہ عالمی امن کیلئےبھی ضروری ہے، وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاکستان چین کیساتھ اسٹریٹجک تعلقات کوبہت اہمیت دیتاہے، وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاک چین لازوال دوستی وقت کیساتھ مزیدمضبوط ہورہی ہے، بلاول بھٹو
  • بریکنگ :- پاکستان خطےمیں امن کاخواہاں ہے،وزیرخارجہ بلاول بھٹو
  • بریکنگ :- پاکستان چینی شہریوں پرحالیہ دہشتگردحملےکی مذمت کرتاہے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- چینی شہریوں پرحملہ کرنیوالوں کوکٹہرےمیں لائیں گے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- کسی کوپاک چین دوستی کونقصان پہنچانےکی اجازت نہیں دیں گے،وزیرخارجہ

افغان وزیرخارجہ مولوی امیر خان متفی کل پاکستان آئیں گے

Published On 09 November,2021 07:22 pm

کابل : (دنیا نیوز) افغان وزیرخارجہ امیر خان متقی کی سربراہی میں طالبان کا وفد کل پاکستان کا دورہ کرے گا۔

یاد رہے کہ طالبان حکومتی وفد وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی دعوت پردورہ کررہا ہے، افغان وفد افغان صورتحال پر 2 روزہ ٹرائیکا پلس اجلاس میں بھی شرکت کرے گا۔

افغان وزارت خارجہ کے ترجمان عبدالقہار بلخی نے ٹوئٹر پر لکھا کہ افغان وزیر خارجہ کی سر براہی میں طالبان کا وفد بدھ کو پاکستان کا دورہ کرے گا جہاں اسلام آباد میں ملاقاتوں میں دونوں ممالک کے تعلقات، معیشت ، افغان مہاجرین سے متعلق بات چیت ہوگی۔

خیال رہے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے افغانستان کے دورے کے دوران افغانستان کے عبوری ویراعظم ملا حسن اخوند سے ملاقات کی تھی، اس ملاقات میں افغان عبوری حکومت کے وزیر خاجرہ امیر خان متفی بھی موجود تھے۔

بعد ازاں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے وطن واپسی کے موقع پر کہا تھا کہ اگلے چند روز میں طالبان کا ایک وفد اسلام آباد آئے گا جو آج پاکستانی وزارتوں کے مختلف ورکنگ گروپس کے ساتھ معاملات کو حتمی شکل دے گا۔

اس سے قبل افغان عبوری حکومت کے ڈپٹی نائب وزیر اطلاعات ذبیح اللہ مجاہد کا کہنا ہے کہ پاکستان اور افغانستان کے معاشی، اقتصادی، تجارتی مفادات یکساں ہیں۔

ذبیح اللہ مجاہد نے پیغام میں کہا ہے کہ افغانستان تمام ہمسایہ ممالک سے دوستانہ تعلقات چاہتا ہے۔ عالمی فورمز پر امن و محبت کے ساتھ تعلقات چاہتے ہیں۔ افغانستان، پاکستان کے ساتھ تاریخی برادرانہ تعلقات رکھتا ہے۔ دونوں ممالک کی تجارتی راہداریاں بھی ایک ہی جگہ سے ہو کر گزرتی ہیں ۔

ترجمان نے کہا کہ پاک، افغان سرحد پر کچھ منفی رجحانات اور تناؤ موجود ہے، دونوں ممالک کے مابین موجودہ سرحدی مشکلات، تناؤ دوطرفہ سطح پر نقصان دہ ہے۔ دونوں ممالک کو جاری مشکلات کو دور کرنے اور سرحدی امور کو بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔