تازہ ترین
  • بریکنگ :- پارلیمنٹ کوکمزورکرناجمہوریت کوکمزورکرنےکےمترادف ہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- پیپلزپارٹی نےہمیشہ جمہوریت کیخلاف اقدامات کیے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- جوپیسہ سندھ کےحوالےکرتےہیں وہ دبئی سےبرآمدہوتاہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- اپوزیشن انتخابی اصلاحات کیلئےپارلیمنٹ میں آکرتجاویزدے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- چاہتےہیں کہ پارلیمان کومضبوط بنادیں،وزیراطلاعات فوادچودھری
  • بریکنگ :- فضل الرحمان جیسےلوگ چاہتےہیں کہ سسٹم نہ چلے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- ان کےدن بھی تھوڑےہیں،آخری الیکشن تھاجوانہوں نےلڑلیا،فوادچودھری
  • بریکنگ :- اپوزیشن کےپاس کوئی ایجنڈانہیں،وزیراطلاعات فوادچوھری
  • بریکنگ :- ارسانےعملی اقدام شروع کیےتومرادعلی شاہ جوتےچھوڑکربھاگ گئے،فواد چودھری
  • بریکنگ :- پانی خودچوری کررہےہیں،الزام وفاق،پنجاب پرلگایاجارہاہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- وفاق اورپنجاب میں(ن)لیگ نے 30 سال حکومت کی،فوادچودھری
  • بریکنگ :- شہبازشریف کبھی مولانا،کبھی بلاول کاکندھااستعمال کررہےہیں،فوادچودھری
  • بریکنگ :- شہبازشریف کےپاس(ن)لیگ کاکنٹرول نہیں ہے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- شہبازشریف اپنےفیصلےکرنےمیں آزادنظرنہیں آتے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- سندھ کےسب سےبڑےدشمن سندھ پرراج کررہےہیں،فوادچودھری
  • بریکنگ :- یہ ضروری ہےکہ جوپیسہ سندھ کودیں اس کی مانیٹرنگ کی جائے،فوادچودھری
  • بریکنگ :- زرداری،فریال تالپور،مرادعلی شاہ کی زمینوں کاپانی چوری کیوں نہیں ہوتا؟فوادچودھری
  • بریکنگ :- کراچی:سندھ میں اگلی حکومت پی ٹی آئی کی ہوگی،فوادچودھری

زرعی یونیورسٹی فیصل آبا د میں بھنگ کے پودے سے دھاگہ تیار، یارن بحران میں کمی آئے گی

Published On 21 March,2021 09:21 am

فیصل آباد: (دنیا نیوز) زرعی یونیورسٹی فیصل آباد میں بھنگ کے پودے سے دھاگہ تیار کیا گیا ہے جس کو کاٹن یارن کے ساتھ مکس کر کے جینز کی پینٹ تیار کی جائے گی جو نہ صرف یارن بحران پر قابو پانے میں مدد گار ثابت ہوگا بلکہ تھوڑی سی حکومتی توجہ سے ملکی خزانہ کو بھی فائدہ ملے گا۔

پاکستان میں اب بھنگ کے پودے سے جینز تیار کی جائے گی، بھنگ کے پودے کے چھالیے کو کاٹن یارن میں ایک خاص تناسب سے استعمال کیا جائے گا۔ زرعی یونیورسٹی کے شعبہ فیبرک اینڈ ٹیکسٹائل ٹیکنالوجی ماہرین نے بھنگ کی چھال اور کاٹن یارن کو ملا کر دھاگا تیار کرلیا ہے۔

پاکستان میں بھنگ قدرتی طور پر پیدا ہوتی ہے، ماہرین کے مطابق دنیا بھر میں بھنگ کے دھاگے سے بنی جینز کی ڈیمانڈ بہت زیادہ ہے اور پاکستان کو اس صنعت سے کروڑوں ڈالر کا فائدہ ہونے کی امید ہے۔

ریسرچرز کا کہنا ہے بھنگ کا پودہ جراثیم کش ہونے کی وجہ سے اس کے دھاگے سے تیار پینٹ بھی جراثیم کش ہے جبکہ مختلف کیمیکلز کی مددسے بھنگ کی چھال کو کاٹن یارن میں مکس کیا گیاہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کاٹن یارن کے ساتھ 20 سے 30 فیصد تک بھنگ سے بنا دھاگا استعمال کیا جاسکتا ہے جس سے یارن بحران پر بھی قابو پانے میں مدد ملے گی۔