تازہ ترین
  • بریکنگ :- موجودہ حکومت نے ملک کوتباہی کی طرف دھکیل دیا ہے،عمران خان
  • بریکنگ :- واضح ہوگیاان کی معیشت ٹھیک کرنےکی تیاری نہیں تھی،عمران خان
  • بریکنگ :- واضح ہوگیا یہ مہنگائی کم کرنےنہیں آئےتھے،عمران خان
  • بریکنگ :- بجٹ سےپہلےہی پٹرول،ڈیزل،بجلی کی قیمتیں بڑھادی گئیں،عمران خان
  • بریکنگ :- موجودہ حکومت نےعام آدمی کا معاشی قتل کردیا ،عمران خان
  • بریکنگ :- انہوں نےپٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں مزید بڑھانی ہیں،عمران خان
  • بریکنگ :- ڈیزل کی قیمت کا سب سےزیادہ اثرکسانوں پرپڑے گا،عمران خان
  • بریکنگ :- سپرٹیکس سےکارپوریٹ سیکٹرپر 40 فیصد ٹیکس ہوجائے گا،عمران خان
  • بریکنگ :- سپرٹیکس کی وجہ سے ہرچیزمہنگی ہوجائےگی،عمران خان
  • بریکنگ :- انڈسٹریز نےمزدوروں کو نکالنا شروع کردیا ہے،عمران خان
  • بریکنگ :- سپرٹیکس لگنےسےکئی فیکٹریاں بندہوناشروع ہوگئی ہیں،عمران خان
  • بریکنگ :- ہماری حکومت نےانڈسٹریزپرٹیکسزکا بوجھ نہیں ڈالا تھا،عمران خان
  • بریکنگ :- ہماری حکومت میں انڈسٹریزکومزدورنہیں مل رہےتھے،عمران خان
  • بریکنگ :- ہماری حکومت میں ٹیکسٹائل انڈسٹریز نے ترقی کی،عمران خان
  • بریکنگ :- موجودہ حکومت نےتنخواہ دارطبقے پرٹیکس بڑھادیا ،عمران خان
  • بریکنگ :- تنخواہ دارطبقےکوپہلےایک لاکھ تک چھوٹ دی گئی تھی،عمران خان
  • بریکنگ :- اب سلیب کو 50 ہزار روپے تک لے آئے ہیں،عمران خان
  • بریکنگ :- ایک لاکھ تنخواہ لینےوالے کا ٹیکس دگنا کردیا گیا،عمران خان
  • بریکنگ :- ہماری حکومت نے ریکارڈ ٹیکس اکٹھا کیا تھا،عمران خان
  • بریکنگ :- ہم نےجولوگ ٹیکس دےرہےتھےان پربوجھ نہیں ڈالا،عمران خان
  • بریکنگ :- ٹیکس نہ دینےوالے 4 کروڑ 30لاکھ گھرانوں کوٹیکس نیٹ میں شامل کیا،عمران خان
  • بریکنگ :- اسلام آباد:روپیہ کی قدر تیزی سے گر رہی ہے،عمران خان
  • بریکنگ :- عدم اعتمادکےبعد ڈالر 212 روپےتک پہنچ چکا،عمران خان
  • بریکنگ :- روپیہ،اسٹاک مارکیٹ گرنےسےریکارڈمہنگائی ہوئی،عمران خان
  • بریکنگ :- بجٹ کے بعد سارا بوجھ تنخواہ دارطبقے پرپڑے گا،عمران خان
  • بریکنگ :- ہماری حکومت نےکوروناکےدوران سب سےزیادہ روزگاردیا،عمران خان

ٹیکس ادا کئے بغیر ملک ترقی نہیں کرسکتا: شوکت ترین

Published On 20 August,2021 04:30 pm

کراچی: (دنیا نیوز) وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین کا کہنا ہے کہ برآمدات میں اضافہ حکومت کی اولین ترجیح ہے، ٹیکس ادا کئے بغیر ملک ترقی نہیں کرسکتا، تاجروں کیساتھ مل کرملک کو آگے لے کر جانا ہے۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ اب آڈٹ تھرڈ پارٹی سے کرایا جائیگا، ڈیڑھ کروڑ ٹیکس ادا نہ کرنے والے افراد کا مکمل ڈیٹا حاصل کرلیا ہے، ان لوگوں کو ٹیکس نظام میں لانے کا طریقہ کار بھی بنالیا گیا ہے، ان لوگوں کو آرٹیفیشل انٹیلیجنس کے ذریعے ٹیکس نیٹ میں لاینگے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارا ملک 1968 میں ایشیا کی چوتھی بڑی معیشت تھا، ہم نے ملک کو دوبارہ اسی سطح پر لے کر جانا ہے، وزیراعظم عمران خان نے احتساب پر فوکس کیا ہوا ہے، فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کی وجہ سے بزنس کمیونٹی پر خوف کی فضا تھی، ایف بی آر کے خوف کو ختم کیا گیا ہے۔

شوکت ترین کا کہنا تھا کہ ایف بی آر کے جاری کردہ نوٹسز کو ختم کر دیا گیا ہے۔ ایف بی آر کی مثبت سوچ کوساتھ لے کر چل رہے ہیں۔ ماضی میں لوگ ایف بی آر سے ڈرے ہوتے تھے۔ ماضی میں نوٹس پرنوٹس آتے تھے۔ چیئرمین ایف بی آر کو کہا ہے جو نوٹس چلے گئے ان پر نظرثانی کر کے واپس لیں۔ اب ایف بی آرسے نوٹس پر نوٹس نہیں آئیں گے۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے شوکت ترین کا کہنا تھا کہ ہر 3 ماہ بعد کراچی کے تاجروں سے ملاقات کروں گا۔ تاجروں کیساتھ مل کرملک کو آگے لے کر جانا ہے۔ بڑے فریق کے طور پر ساتھ لے کر چلنا ہے۔ حکومت کی معاشی پالیسیوں میں تاجروں سے مشاورت کریں گے۔

وفاقی وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ برآمدات میں اضافہ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ معیشت میں بہتری لائیں گے ۔ معاشی ترقی کیلئے تاجر مثبت تجاویزدیں۔ ہمارا ملک 1968ء میں ایشیاء کی چوتھی بڑی معیشت تھا۔ ہم نے ملک کو دوبارہ اسی سطح پر لے کر جانا ہے ، ہماراالمیہ ہے کہ ماضی میں زراعت پر سرمایہ کاری نہیں کی۔ ٹیکس ادا کیے بغیر یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا، ہم پیسا بنانے کو گنا نہیں سمجھتے، پیسا کمانا اچھی چیز ہے ، اہم اشیا کی زائد قیمتیں عالمی سطح پر مہنگی ہونے کے باعث ہیں