تازہ ترین
  • بریکنگ :- آرمی چیف جنرل قمرجاویدباجوہ کا بہاولپورکادورہ ، آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- آرمی چیف نےخیرپورٹامیوالی اوراسرانی میں تربیتی مشقوں کامشاہدہ کیا
  • بریکنگ :- آرمی چیف نےمیکنائزڈدستوں کی جنگی مشقوں کامشاہدہ کیا،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- مشقوں میں فارمیشنزنےجارحانہ حکمت عملی کےآپریشنزکیے،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- آرمی چیف نےفارمیشنزکی آپریشنل تیاریوں کوسراہا، آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- دشمن کوشکست دینےکیلئےچیلنجز سےنمٹنےکی تربیت ضروری ہے،آرمی چیف
  • بریکنگ :- پاک فوج داخلی سالمیت وملکی سلامتی کیلئےکسی خطرےسےنمٹنےکیلئے تیار ہے، آرمی چیف
  • بریکنگ :- کور کمانڈربہاولپورلیفٹیننٹ جنرل خالدضیانےآرمی چیف کااستقبال کیا

کورونا صورتحال میں بہتری، سندھ حکومت کا لاک ڈاؤن میں نرمی لانے کا فیصلہ

Published On 03 June,2021 05:07 pm

کراچی: (دنیا نیوز) سندھ حکومت نے صوبے بھر میں کورونا وائرس کی صورتحال میں بہتری کو دیکھتے ہوئے لاک ڈاؤن میں نرمی لانے کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت آئندہ چند روز میں کاروبار رات 8 بجے تک کھولنے کا اعلان کر دے گی۔

یہ بات صوبائی وزیر سعید غنی نے کراچی چیمبر آف کامرس میں ایک تقریب سے خطاب میں کہی۔ ان کا کہنا تھا کہ بازاروں پر پابندیاں مجبوری سے لگائی گئی ہیں، تاہم اب ہم چیزیں کھولنے کی طرف جا رہے ہیں۔

سعید غنی نے کہا کہ صوبہ سندھ میں سندھ میں کورونا وائرس کی صورتحال بہتر ہے، چند روز میں کاروبار رات 8 بجے کھولنے کا اعلان کیا جائیگا۔

یہ بھی پڑھیں: ویکسین نہ لگوانے والے سرکاری ملازم کو جولائی کی تنخواہ نہیں ملے گی: سندھ حکومت

دوسری جانب سندھ حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ ویکسین نہ لگوانے والے سرکاری ملازم کو جولائی کی تنخواہ نہیں ملے گی۔ وزیر اعلی مراد علی شاہ نے صوبائی محکمہ خزانہ کو ہدایت جاری کر دی۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت کورونا صوبائی ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا جس میں صوبے میں کورونا صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ مراد علی شاہ نے محکمہ خزانہ کو ہدایت کی کہ جو سرکاری ملازم ویکسین نہیں لگوائے گا اس کی جولائی سے تنخواہ بند کی جائے۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ بیرون ملک سے کراچی آنے والے 26 ہزار 812 افراد کے ٹیسٹ کئے گئے، 55 افراد کے ٹیسٹ مثبت آئے، 29 مئی کو 4 مسافروں میں انڈین ویرینٹ کی تشخیص ہوئی، ان افراد سے 14 لوگ رابطے میں آئے ان کے بھی ٹیسٹ کئے جا رہے ہیں۔

کورونا صوبائی ٹاسک فورس اجلاس کو بتایا گیا کہ سندھ میں اب تک 15 لاکھ سے زائد افراد کو ویکسین لگائی جاچکی ہے، ضلع شرقی کورونا سے بدستور سب سے زیادہ متاثر ہے، 27 مئی سے 2 جون تک ضلع شرقی میں 21 فیصد نئے کیسز اور 20 اموات ہوئیں، گزشتہ ماہ سندھ میں 392 افراد کورونا سے جاں بحق ہوئے، انتقال کر جانے والوں میں سے 238 وینٹی لیٹرز پر تھے، 73 افراد کا انتقال گھروں پر ہوا۔