تازہ ترین
  • بریکنگ :- کراچی:سندھ حکومت اور جماعت اسلامی نے مل کر ایک مسودہ بنایا ہے،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- کراچی:2021 کا ترمیمی بل اب ختم ہو جائےگا،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- آج میڈیا کے سامنے وزیر بلدیات نے ہمارے مطالبات تسلیم کیے،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- ہم اس معاہدے پر عمل بھی کروائیں گے،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- کراچی:صوبائی فنانس کمیشن کے قیام پر رضامندہیں،ناصر حسین شاہ
  • بریکنگ :- مئیر اور ٹاؤن چیئرمین کمیشن کے ممبر ہوں گے،ناصر حسین شاہ
  • بریکنگ :- سندھ حکومت تعلیمی ادارے اور اسپتال بلدیہ کو واپس کرنے پر تیار،ناصر حسین شاہ
  • بریکنگ :- آکٹرائے اور موٹر وہیکل ٹیکس میں سےبھی بلدیہ کراچی کو حصہ ملے گا،ناصر حسین شاہ
  • بریکنگ :- کراچی: مئیر کراچی واٹر بورڈ کے چیئرمین ہوں گے،ناصر حسین شاہ
  • بریکنگ :- بلدیہ کو خود مختار بنانے کیلئےمالی وسائل دینےپر سندھ حکومت تیار، ناصر حسین
  • بریکنگ :- کراچی: بلدیاتی قانون پر جماعت اسلامی اور سندھ حکومت کے مذاکرات کامیاب
  • بریکنگ :- سندھ حکومت اور جماعت اسلامی کےدرمیان تحریری معاہدہ
  • بریکنگ :- جماعت اسلامی کا دھرنا ختم کرنے کا اعلان،کارکنان گھروں کو روانہ
  • بریکنگ :- کراچی: آج کے اعلان کیے گئے دھرنے بھی ختم کر دیئے ہیں،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- آپ کو تاریخی جدوجہد کرنے پرمبارکباد پیش کرتا ہوں،حافظ نعیم الرحمان
  • بریکنگ :- آپ نے ساڑھے تین کروڑ عوام ہی نہیں پورے ملک کو حیران کردیا،حافظ نعیم
  • بریکنگ :- ہم استقامت کے ساتھ 29 دن دھرنے پر بیٹھے رہے،حافظ نعیم الرحمان

ایف اے ٹی ایف کا ایران کو بلیک لسٹ کر نے کا اعلان

Last Updated On 21 February,2020 11:54 pm

پیرس: (ویب ڈیسک) فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) نے فرانس کے دارالحکومت پیرس میں ہونے والے 5 روزہ اجلاس کے بعد ایران کو بلیک لسٹ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

ایف اے ٹی ایف کے بیان میں کہا گیا ہے کہ حکومت ایران منی لانڈرنگ میں ملوث رہا ہے اور انسداد دہشت گردی کے بین الاقوامی معیار اختیار کرنے اور ان پر عمل درآمد میں مکمل طور پر ناکام رہا ہے۔

اس اقدام سے پہلے پیرس میں ایف اے ٹی ایف کے سہ روزہ اجلاس کے دوران ایران کو انتباہ جاری کیا گیا تھا کہ وہ دہشت گردی کی مالی معاونت روکنے سے متعلق ضابطے بنائے، لاگو کرے اور حاصل کردہ پیش رفت بیان کرے۔

ایف اے ٹی ایف نے کہا ہے کہ عام حالات میں کوشش یہ ہونی چاہیے کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی نشاندہی اور ہدایات کے بغیر ہی، آزادانہ طور پر دہشت گردی سے سختی سے نمٹنے کے اقدامات کیے جائیں۔

ذرائع کے مطابق، بلیک لسٹ میں ڈالے جانے کے بعد اب ایران کے ساتھ لین دین کسی طور پر جائز نہیں ہو گا، جب کہ نگرانی کے سخت نظام کے نتیجے میں صورت حال میں بہتری کا امکان مشکل تر ہو جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:ایف اے ٹی ایف کا پاکستان کو آئندہ 4 ماہ تک گرے لسٹ میں برقرار رکھنے کا فیصلہ

بلیک لسٹ کا مطلب یہ ہو گا کہ ایران میں کام کرنے والے اداروں کے مالی معاملات کو بیرونی جانچ پڑتال کے نظام سے گزارا جائے گا، جب کہ وہ چند بینک اور کاروباری ادارے جو اب تک ایران میں کام کر رہے ہیں، ان پر دباؤ میں اضافہ ہو گا۔

ایران کی معیشت پر پہلے ہی سخت ترین پابندیاں عائد ہیں۔ ایسے میں جب نیوکلیئر معاملات، میزائل پروگرام اور مشرق وسطیٰ میں ایران کی سرگرمیوں پر نگرانی کا عمل جاری ہے، ایران سخت دباؤ کا شکار ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر ایران سرمایہ کاری کو فروغ دینے کا خواہاں ہے تو اس کے لیے لازم ہو گا کہ ایف اے ٹی ایف کے قواعد کی پابندی کرے۔ اس بات کی اہمیت اس لیے بھی بڑھ گئی ہے کیونکہ 2018ء میں ایران اور بین الاقوامی طاقتوں کے مابین ہونے والے جوہری معاہدے سے امریکا نے علیحدہ ہونے کا اعلان کیا اور ساتھ ہی ٹرمپ انتظامیہ نے ایران پر دوبارہ سخت تعزیرات عائد کر دیں تھیں۔