تازہ ترین
  • بریکنگ :- اسلام آباد:جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نظرثانی کیس کاتحریری فیصلہ
  • بریکنگ :- عدالت نے 9 ماہ 2 دن بعدنظرثانی درخواستوں کاتحریری فیصلہ جاری کیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:جسٹس یحییٰ آفریدی نےاضافی نوٹ تحریرکیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:سریناعیسیٰ کی نظرثانی درخواستیں اکثریت سےمنظور،فیصلہ
  • بریکنگ :- 10رکنی لارجربنچ کا 4-6 کےتناسب سے سریناعیسیٰ کےحق میں فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:سپریم کورٹ نے مختصر فیصلہ 26 اپریل 2021 کو سنایا تھا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:فیصلہ جسٹس مقبول باقر،جسٹس مظہرعالم نےتحریرکیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:فیصلہ جسٹس منصورعلی شاہ،جسٹس امین الدین نےتحریرکیا
  • بریکنگ :- اسلام آباد:عدالت کےجج سمیت کوئی قانون سےبالاترنہیں،فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:کسی کوبھی قانونی حق سےمحروم نہیں کیاجاسکتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- جج کوڈآف کنڈکٹ کےمطابق اہلخانہ کےمعاملات پرجوابدہ نہیں،فیصلہ
  • بریکنگ :- جج اپنی اہلیہ اوربچوں کےمعاملات کاذمہ دارنہیں ہوتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:ہرشخص کواپنےکیےاعمال کاحساب دیناہوتاہے،فیصلہ
  • بریکنگ :- اسلام آباد:کسی اورکی غلطی پردوسرےکوسزانہیں دی جاسکتی،فیصلہ
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ یاکوئی ادارہ سپریم جوڈیشل کونسل کوکارروائی کانہیں کہہ سکتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- صدرمملکت کی سفارش کےبغیرسپریم جوڈیشل کونسل کارروائی نہیں کرسکتی،فیصلہ
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ ازخودنوٹس کااختیارسپریم جوڈیشل کونسل پراستعمال نہیں کرسکتی،فیصلہ
  • بریکنگ :- سپریم کورٹ کاسپریم جوڈیشل کونسل کوحکم آرٹیکل 211 کی خلاف ورزی ہے،فیصلہ
  • بریکنگ :- بعض اوقات ججزکی ساکھ متاثرکرنےکی کوششیں ہوتی ہیں،فیصلہ
  • بریکنگ :- ججزکےپاس اپنی صفائی پیش کرنےکیلئےعوامی فورم بھی نہیں ہوتا،فیصلہ
  • بریکنگ :- ایسی صورتحال میں عدلیہ کی بطورآئینی ادارہ ساکھ متاثرہوتی ہے،فیصلہ

گیس بندش اور اوقات کار کے حوالے سے شیڈول جاری کرنے کی خبریں جعلی قرار

Published On 15 November,2021 06:03 pm

لاہور: (ویب ڈیسک) ملک بھر میں گیس بندش اور اوقات کار کے حوالے سے شیڈول جاری کرنے کی خبروں کو جعلی قرار دیدیا گیا۔

واضح رہے کہ سوشل میڈیا سمیت دیگر جگہوں پر خبریں چل رہی ہیں جس میں کہا جا رہا ہے کہ گھریلو صارفین صرف ان اوقات میں گیس استعمال کر سکیں گے صبح 5:30 سے 8:30 بجے تک، پھر 11:30 سے 2 بجے تک، شام 4 سے رات 10 بجے تک۔

ان خبروں کے بعد ٹویٹر پر وفاقی وزارت توانائی کی طرف سے بتایا گیا کہ مختلف چینلز پر گمراہ کن خبر چلائی جا رہی ہے کہ دن میں صرف تین وقت گھریلو صارفین کوگیس مہیا کی جائے گی۔

ٹویٹر پر مزید بتایا گیا کہ وزارت توانائی کی طرف سے ایسا کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا تاہم وزارت نے سوئی نادرن کے حکام کو کھانے کے اوقات میں گھریلو صارفین کو گیس کی فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت جاری کر رکھی ہیں۔

دوسری طرف سوئی ناردرن گیس پائپ لائن (ایس این جی پی ایل) کے آفیشل ٹویٹر اکاؤنٹ پر بتایا گیا کہ سوئی ناردرن گیس کی جانب سے گیس بندش، اوقات کار کے حوالے سے کوئی شیڈول جاری نہیں کیا گیا. اس حوالے سے زیرِ گردش اطلاعات جن میں گیس بندش کے اوقات ظاہر کیے جارہے ہیں، غلط ہیں. تمام اسٹیک ہولڈرز سے گزارش ہے کہ عوام الناس کو درست صورتحال سے آگاہ کیا جائے۔

یاد رہے کہ چند روز قبل وفاقی وزیر حماد اظہر نے سینیٹ میں خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ گیس سپلائی کو ناشتے، دوپہر اور رات کے کھانےکے وقت یقنیی بنایا جائے گا۔ پائپ لائنز کی بحالی کے لیے کام کر رہے ہیں اور روس کے ساتھ گیس کا معاہدہ جلد مکمل کریں گے۔ 70 فیصد گیس ملک سے نکلتی ہے جبکہ 30 فیصد ایل این جی ہے، گیس کی قیمت 2019 سے نہیں بڑھی، سندھ 38 فیصد گیس سپلائی کرتا ہے، کے پی 12 ، پنجاب 8 اور بلوچستان 40 فیصد گیس سپلائی کرتا ہے۔ سندھ سے نکلنے والی گیس 80 فیصد وہیں استعمال ہو جاتی ہے جبکہ خیبر پختونخوا سے نکلنے والی 70 فیصد گیس وہیں استعمال ہو جاتی ہے۔